function gmod(n,m){ return ((n%m)+m)%m; } function kuwaiticalendar(adjust){ var today = new Date(); if(adjust) { adjustmili = 1000*60*60*24*adjust; todaymili = today.getTime()+adjustmili; today = new Date(todaymili); } day = today.getDate(); month = today.getMonth(); year = today.getFullYear(); m = month+1; y = year; if(m<3) { y -= 1; m += 12; } a = Math.floor(y/100.); b = 2-a+Math.floor(a/4.); if(y<1583) b = 0; if(y==1582) { if(m>10) b = -10; if(m==10) { b = 0; if(day>4) b = -10; } } jd = Math.floor(365.25*(y+4716))+Math.floor(30.6001*(m+1))+day+b-1524; b = 0; if(jd>2299160){ a = Math.floor((jd-1867216.25)/36524.25); b = 1+a-Math.floor(a/4.); } bb = jd+b+1524; cc = Math.floor((bb-122.1)/365.25); dd = Math.floor(365.25*cc); ee = Math.floor((bb-dd)/30.6001); day =(bb-dd)-Math.floor(30.6001*ee); month = ee-1; if(ee>13) { cc += 1; month = ee-13; } year = cc-4716; if(adjust) { wd = gmod(jd+1-adjust,7)+1; } else { wd = gmod(jd+1,7)+1; } iyear = 10631./30.; epochastro = 1948084; epochcivil = 1948085; shift1 = 8.01/60.; z = jd-epochastro; cyc = Math.floor(z/10631.); z = z-10631*cyc; j = Math.floor((z-shift1)/iyear); iy = 30*cyc+j; z = z-Math.floor(j*iyear+shift1); im = Math.floor((z+28.5001)/29.5); if(im==13) im = 12; id = z-Math.floor(29.5001*im-29); var myRes = new Array(8); myRes[0] = day; //calculated day (CE) myRes[1] = month-1; //calculated month (CE) myRes[2] = year; //calculated year (CE) myRes[3] = jd-1; //julian day number myRes[4] = wd-1; //weekday number myRes[5] = id; //islamic date myRes[6] = im-1; //islamic month myRes[7] = iy; //islamic year return myRes; } function writeIslamicDate(adjustment) { var wdNames = new Array("Ahad","Ithnin","Thulatha","Arbaa","Khams","Jumuah","Sabt"); var iMonthNames = new Array("????","???","???? ?????","???? ??????","????? ?????","????? ??????","???","?????","?????","????","???????","???????", "Ramadan","Shawwal","Dhul Qa'ada","Dhul Hijja"); var iDate = kuwaiticalendar(adjustment); var outputIslamicDate = wdNames[iDate[4]] + ", " + iDate[5] + " " + iMonthNames[iDate[6]] + " " + iDate[7] + " AH"; return outputIslamicDate; }
????? ????

کیا واقعی ہمارے پاس چوائس نہیں رہی

نو شین ناز | وزن کم کریں

’میرے  پاس کوئی اور راستہ نہیں تھا! ‘‘ مریضہ کی تھراپی کے دوران اُس نے چیخ کر کہا میرے پاس نشہ کرنے کے سوا اور کوئی چوائس ہی نہیں تھی کیونکہ میرے اِردگرد سب لوگ بس اپنی اپنی زندگی جی رہے تھے۔ کسی کو میرے جینے مرنے کی فکر ہی کہاں تھی۔ یہ کہنا کہ اور کوئی چوائس نہیں تھی، دراصل نشے کی ذمہ داری سے خود کوآزاد کر دینا ہے دوسروں کو ذمہ دار ٹھہرادیا توخودتوگناہ گار نہ رہے۔

چوائس سے انکار احتساب اور جواب دہی سے بچائو کی آسان ترین حکمتِ عملی ہے۔ میں نے اپنی زندگی میں بار بار دیکھا ہے کہ ہمارے پاس ہر صورت حال میں کوئی نہ کوئی چوائس ضرور ہوتی ہے۔ ہاں یہ ہوسکتا ہے کہ اِس چوائس کے نتائج ہمارے لیے قابلِ قبول نہ ہوں،جیسے گھریلو زندگی میں آپ کے پاس ایک دو بار تو چوائس ہوسکتی ہے کہ گیس، پانی کا بل ادا نہ کریں تاہم اس چوائس کے نتائج آپ کو پسند نہیں آئیں گے حالانکہ وہ توہر صورت میں سامنے آنے ہی آنے ہیں۔ آپ کسی ٹرک کو دیکھ کر جان بچانے کی غرض سے اسے راستہ دے دیتے ہیں۔ نہ دینے کا چوائس بھی ہے ’’مگر بڑا مہنگا اور رسکی ‘‘(Risky)پاس کوئی اور راستہ نہیں ہوتا۔

اِس لیے میں وہ ہی کھاتی ہوں جو گھر میںپکتا ہے۔ مریضہ نے اپنے خوف ناک حد تک بڑھے ہوئے وزن کے لیے پھر گھر والوں کو ملزم ٹھہرا دیا۔اُس کا کولیسٹرول لیول خطرناک حد تک بڑھ چُکا تھا اور وزن 93 کلو کو کراس کر چُکا تھا میری ایک اور مریضہ نے مجھ سے کہا تھا۔ ’’میں کسی ڈائٹ پلان پر نہیں جاسکتی‘‘ دل تو میرا کر رہا تھا کہ پوچھوں بی بی تم میرے پاس کیا چوڑیاں خریدنے آئی ہو۔  خاص طور پر ٹائم لیا ،اتنی دُور سے چل کر آئی، جانے کیسے میری جگہ تلاش کی، باہر ابّا جی ویٹنگ روم میں بیٹھے تھے۔ یقینا انھیں گن پوائنٹ پر تو لے کر نہیں آئی تھی۔ وہ ساتھ اپنی مرضی سے آئے تھے میری دو ہزار روپے کی فیس بھی بی بی کو تھمائی تھی۔

تو ایسے میں وہ بی بی کتنی مجبور تھی گھر والوں کی سختیاں اور مجبوریاں سہنے کو؟ ان کو الزام دینے کو اور خود کو بری الذمہ ٹھہرانے کو۔ عملی طور پر صورت حال یہ ہوتی ہے کہ ہم سب یہ سوچتے ہیں کہ جو آسانی سے ہو رہا ہے وہ کر لیں فائدہ نقصان بعد میں دیکھ لیں گے۔ زیادہ نقصان ہوا تو الزام اپنے ماحول پر یا دوسروں پر ڈال دیں گے۔ ایک صاحب جو بازو والی کرسی پر نہیں بیٹھ سکتے۔ خود بتا رہے تھے دفتر کی کرسی کے بازو توڑنے پڑے تھے۔ صوفہ ان کا وزن اٹھانے سے قاصر تھا۔

میں نے ان سے صرف دو باتیں پوچھی تھیں۔ کیا کھانا دیکھ کر آپ اب بھی ہاتھ نہیں روک سکتے۔ جواب نفی میں تھا۔ میں نے پوچھا۔ اپنے پیاروں کو روتا چھوڑ کر جائیں گے۔ ان کی شکلوں پر بھی ترس نہیں آتا۔ بولے میرے گھر میں کوئی ایسی چیز اور کھاناہی نہیں ہے جس سے وزن کم ہوسکتا ہو پھر کھانا دیکھ کر ہاتھ کیسے رک سکتا ہو۔ اتنا صبر کرنا بے حد مشکل ہے، کوئی آسان راستہ بتائیے۔

آپ زیادہ پانی پئیں۔ ہر نماز باقاعدگی سے مکمل اور کھڑے ہو کر ادا کریں۔ روز نہائیں۔ ڈٹ کر واک کریں۔ ٹیبل پر جو خوراک موجود ہو اُس میں سے چند لقمے کھائیں۔ بقیہ پیٹ سلاد، دہی سے بھریں۔ اپنی مرضی سے خود کو روکیں ورنہ فطری طور پر وہ وقت جلد آجاتا ہے جس سے ہم سب ڈرتے ہیں ان کا جواب تھا۔ نماز پڑھے تو مدت ہوگئی ہے زیادہ دیر کھڑا نہیں ہوسکتا تو واک کیسے کروں۔ میرا جواب تھا۔ یہ آپ کے اپنے چوائس کی قیمت ہے۔ اب بھی چوائس نہ بدلا تو سب کچھ بدل جائے گا۔ اس خاتون کو بھی یہی سمجھایا تھا کہ آپ اپنے ’’ظالم‘‘خاندان میں رہتے ہوئے اتنا بھی نہیں کرسکتیں؟ کہ اپنا ہاتھ روک سکو… گھر کے کام، حتیٰ کہ جھاڑو پوچا خود کرو۔ بولی پھر نوکرانی کیا کرے۔

اسے سمجھانا مشکل تھا کہ آپ اپنی نوکرانی کو بیمار کرنے کا ہی معاوضہ دیتے ہو۔ اس کی سوئی اسی ’’ظالم‘‘ کے لفظ پر اٹکی تھی۔ میں نے کہا’’کتنے ظالم ہیں ناں ابّا جی جو گرین ٹائون سے کرایہ بھاڑا لگا کر لائے پھر آپ کو فیس دے کر میرے پاس بھیجا، ڈائٹ پلان بنوائو۔ ایسے’’ظالم‘‘ بڑے قابلِ قدر ہوتے ہیں بی بی!‘‘ ویسے وہ واقعی بہت ظالم تھے۔ بیٹی کی سستی اور چسکے کو ختم کرنے کا جو سوچا تھا! یہ چاہا تھا کہ وہ واپس زندگی کی طرف آئے۔ جسمانی طور پر بھی قبول صورت لگے۔ شادی کی عمر توگزر گئی۔

ایک محاورہ سا ہے مگر انسان اندر سے مضبوط، مطمئن اور مسرور ہو تو یہ خوشی عمر کے کسی بھی حصے میں مل جاتی ہے۔ مایوسی کا مطلب یہ کیوں نکالنا شروع کر دیا ہے کہ یا تو فوری خودکشی کر لی جائے یا پھر کھا کھا کر ذرا لانگ ٹرم میں خود خوکشی کر لی جائے۔ دونوں صورتوں میں اپنا حال تو خراب ہی تھا مستقبل بھی دائو پر لگا دیا۔ اپنی جان خود اپنے ہاتھوں لینے والوں کا انجام تو ہمارے بڑے ہی بتاتے رہے ہیں کہ بڑا ہی خراب ہوتا ہے۔ اب آئیے آپ کے سوال کی طرف۔
کتنا وزن ہونا چاہیے

سوال: باجی جی! میری عمر 23 سال ہے اور قد پانچ فٹ پانچ انچ ہے۔ میرا وزن کتنا ہونا چاہیے؟ (صبا سلیم۔ بورے والا)
جواب: صبا!آپ نے یہ نہیں بتایا کہ آپ شادی شدہ ہیں یا نہیں اور آپ کا موجودہ وزن کتنا ہے۔ یہ واضح نہیں ہے کہ آپ کو ماڈل ویٹ درکار ہے یا پھر صحت مندانہ مناسب وزن کی تلاش ہے؟

ہرنیے کا آپریشن
آپ کا وزن 50 سے 55 کلوگرام ہو تو بہتر رہے گا۔ کوشش کیا کریں کہ بہت دبلی پتلی باڈی کو آئیڈلائز کرنے کے بجائے ایکٹونیس اور صحت کو معیار زندگی بنائیں۔ روز واک اوراچھی غذا آپ کو بہتر لائف اسٹائل دے سکتی ہے۔

سوال: السلامُ علیکم میڈم نوشین! میں نے اپنی دوست کے گھر اُردو ڈائجسٹ دیکھا اور آپ کی تعریف سنی، میرا مسئلہ بھی موٹاپا ہے۔ عمر 34سال، قد پانچ فٹ دو انچ ہے۔ وزن 81کلوگرام ہے ۔ میرے دو بچے ہیں، آپریشن سے ہوئے تھے۔ ہرنیا کا آپریشن بھی ہوا ہے اور دو ابارشن بھی ہوئے ہیں۔ میرے لیے بھی کوئی پلان تجویز۔ لوگوں کو تو آپ سے بہت خیر پڑتی ہے۔ (رضوانہ۔ بہاولپور)

جواب: آپ کا ہرنیا کا آپریشن ہوا ہے۔ دن میں کم از کم تین گھنٹے Abdominal Belt لگائیں اور اس دوران کھانا پینا نہیں ہے۔ بیلٹ لازم لگائیں اور یہ Life time کے لیے ہے۔ آپ کے لیے ڈائٹ پلان یہ ہوگا۔
صبح دو سپون اسپغول چھلکا، دہی ایک پیالی، ایک سادہ چپاتی۔

11 بجے: لیمن گراس قہوہ، 2بجے : لیموں پانی، 2:30 :سلاد بڑی پلیٹ، چھوٹی سی روٹی یا آدھی پلیٹ بوائل رائس، گرین ٹی۔ 4بجے: سکم (Skim)مِلک، 6 بجے: موسمی کا پھل (آم، کیلا، انگور) مناسب مقدار میںلے سکتی ہیں۔08:30:بجے جو کا دلیہ، ایک کھجور۔ 9:30بجے: دو سپون اسپغول کا چھلکا، آدھا کپ دودھ۔ آپ یہ پلان صرف ایک ماہ استعمال کر سکتی ہیں۔ ساتھ وٹامن ڈی اور ای کی گولیاں لیں۔ مجھے فون پر تنگ نہیں کرنا، اپنا سوال اردو ڈائجسٹ کے دفتر بھجوائیے۔ وہاں سے باری آنے پر جواب مل جائے گا۔ ہلکی پھلکی واک، مکمل نمازیں ادا کریں، پانی اچھے سے یعنی زیادہ لیں۔

عمر بتائے بغیر ڈائٹ پلان

سوال: باجی! میرا وزن 93کلوگرام ہے مجھے پلان بتا دیں۔ (نیلم)
جواب: نیلم اپنی عمر بتا دیتی تو آسانی ہو جاتی اور کیا کھاتی ہیں جب یہ نہیں بتائیں گی تو میں ٹھیک سے نہیں بتا سکتی، نہ اپنا قد لکھا، نہ مجموعی صحت کا احوال سامنے ہے۔ لکھتے ہوئے یہ ساری تفصیلات لکھنا نہ بھولا کریں۔بہرحال صبح لیمن گراس کا آدھا کپ پی کر دو گھنٹے واک کریں، ناشتے میں ایک انڈا اور چائے بغیر شکر کے لیں۔ دوپہر بارہ بجے لیمن گراس، قہوہ اور ایک کھجور لے لیں۔ ایک ماہ کے بعد نتیجہ بتائیے۔

میں وزن بڑھانا چاہتا ہوں
سوال: میری عمر 22سال ، قد پانچ فٹ دس انچ ہے۔ مجھے بھوک بھی نہیں لگتی، مجھے کوئی پلان بتائیں تاکہ میں صحت مند نظر آئوں۔ (مدثر۔ لاہور)

جواب: ایسے کھانے کھائیں جو زیادہ کیلوریز رکھیں لیکن زیادہ فیٹ (Fats) اور شوگر نہ کھائیں۔ اپنے تین میل ریگولر لیںکوئی بھی کھانا نہ چھوڑیں۔ خاص طور پرناشتا!آپ کم از کم پانچ دفعہ کھانا لیں، مناسب مقدار میں اور طے شدہ وقت پر۔ جوسز، دودھ، ملک شیکسلے سکتے ہیں۔ آپ سبزیاں، چاول، جو، پاستا، آلو، گاجر لوکی اور حلوہ کدو کھائیں۔ کھجور کا استعمال بھی کریں۔ واک کریں، نماز پڑھیں۔ مجموعی طور پر نظام انہضام اچھا ہونا چاہیے۔

مجھے آج تک Periodsنہیں ہوئے
سوال: میری عمر 22سال ہے اور میرا وزن 100کلو ہے اور کبھی کبھار 105بھی ہو جاتا ہے۔ پلیز میری مدد کریں، مجھ سے بھوک کنٹرول نہیں ہوتی ہے۔

جواب: حیرت ہے آپ نے اپنے اس مسئلے کو اتنی عمر ہو جانے کے باوجود حل نہیں کیا۔ فوراً اپنی گائنی کی ڈاکٹر سے مشورہ لیں اور مطلوبہ ٹیسٹ کے بعد علاج شروع کریں۔ وزن کم کرنے کے لیے دن میں دو گھنٹے سخت ورزش کریں۔ شروع میں ایک ماہ واک اور پھر باقاعدہ ایروبکس اور Resistance ایکسرسائز کریں۔ ناشتے میں ایک پھل اور اسکم دودھ کا گلاس، چائے کے اوقات میں صرف لیمن گراس قہوہ استعمال کریں۔ دوپہر کے کھانے میں آدھی چپاتی اور بڑی پلیٹ سلاد اور چھوٹی پیالی دہی ہو۔

رات کا کھانا Veg سوپ ہو یا پھر مونگ یا مسور کی دال کا سوپ لے لیں۔ سونے سے پہلے دو سپون اسپغول ضرور استعمال کریں۔ وٹامن بی، ای اور ڈی کی گولیاں استعمال کریں۔ پانی کا استعمال وافر کریں۔ نماز میں بے حد لمبا سجدہ کریں، اپنے مسئلے کی طرف فوری توجہ دیںہر کام چھوڑ کر۔ اسے روٹین میں بالکل نہ لیں۔ لاپرواہی ساری عمر کا دکھ بن جاتا ہے۔

اس ماہ کی خوشخبریاں
رکیہ اصغرلی بورے والا سے98سے90کلو گرام پر آئیں۔ آسیہ مقبول لودھراں سے 105 سے 99کلوگرام پر آئی ہے۔،آپ اپنا پلان ضرور بدلیں۔ عذرا کمالیہ سے 102 سے 84 پر تین ماہ میں آئی ہیں، آپ بھی فوراً اپنا پلان بدلیں۔ ذیشان حیدر فیصل آباد سے 80 سے 77 کلوگرام پر آئے ہیں، آپ کوشش کریں اور ساتھ واک بھی جاری رکھیں۔ عبداللہ عمر میانوالی سے 123 سے 108کلوگرام پر آئے ہیں۔ بہت مبارک ہو۔ آپ کو اللہ آسانی عطا کرے اور محنت کی ہمت بھی دے۔ آپ بھی پلان بدلوالیں۔ میرے کلینک کے اوقات کئی قارئین نے پوچھے ہیں۔ صبح 7سے 9اور شام 4 سے 6بجے تک ہیں۔کلینک میں نئے اور اپنے چین(Chain) پیشنٹ دیکھتی ہوں۔

اس کے ساتھ اجازت چاہوں گی۔ اپنی اچھی دعائوں میں مجھے اور میرے اہل خانہ کو ضرور یاد رکھیں۔اللہ ہم سب کو اپنی حفظ و امان میں رکھے۔